بلوچستان میں کچھ بھی ہوسکتا ہے

  • by Admin
  • جنوری 13, 2018
  • 0
  • 47  Views
  • 0 Shares

کوئٹہ ،خصوصی رپورٹ

‏بلوچستان اسمبلی نے ساڑھے چار سالوں میں تیسرا وزیراعلیٰ منتخب کرلیا۔ نومنتخب وزیراعلیٰ عبدالقدوس بزنجو کا تعلق مسلم لیگ ق سے ہے اور وہ 1974میں ضلع آواران میں پیدا ہوئے ۔ قدوس بزنجو نے بلوچستان یونیورسٹی سے ایم اے انگریزی کیا ۔ انہوں نے سیاسی کیریئر کا آغاز پرویز مشرف دور میں کیا اور2002میں پہلی مرتبہ ایم پی اے منتخب ہوئے اور وزیر لائیو اسٹاک بھی رہے ۔
میر عبدالقدوس بزنجو 2013میں حلقہ 41آواران ضلع سے ایم پی اے منتخب ہوئے ان کے اس انتخاب میں دلچسپ بات یہ ہے کہ انہوں نے پاکستان کی تاریخ میں کم ترین ووٹ حاصل کیے اور ایم پی اے بھی بن گئے ۔ انہوں نے الیکشن میں صرف 544ووٹ حاصل کیے جو اس حلقے میں کسی امیدوار کے حق میں ڈالے گئے سب سے زیادہ نکلے۔
بزنجو صاحب 2013کے بعد بلوچستان اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر بھی رہے ۔ یوں پاکستان کی تاریخ میں سب سے کم ووٹ لے کر جیتنے والا ایم پی اے پورے صوبے کا وزیر اعلیٰ بن گیا ۔ اور یہ بھی صرف بلوچستان اسمبلی کا ہی خاصہ ہے کہ یہاں وزیر اعلیٰ منتخب ہونے والے رکن کی جماعت اسمبلی میں اکثریت ہی نہیں ہے ۔ ممیہ لیگ ق کے صرف پانچ ممبر ہیں ۔

Post Tags:

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

*
*